ریسرٕچرز کو دس کروڑ سال پرانا غار مل گیا، اندر داخل ہونے کے بعد کون سی چیز دیکھ لی جو حیران رہہ گئے….

بیجنگ (نیوز ڈیسک) چین میں سائنس دانوں‌ نے ایک بڑی غار کا پتہ لگایا ہے، کہا جاتا ہے کہ وہ تقریبا 10 کروڑ سال پرانا ہے. میائو روم نامی یہ غار زیر زمین ہونے کے ساتھ اتنی لمبی ہے کہ اس کی اوچائی مشہور اہرام مصر سے تقریباً چار گنا بڑی ہے جبکہ اس کا پھیلا ئوں فٹ بال کے 22 گرائونڈز جتنا ہے۔ سائنسدانوں نے اس کا مجموعی حجم 38کروڑ مکعب فٹ سے بھی زائد بتایا ہے ۔ اس غار میں ایسے خوبصورت تفریحی مناظر ہیں جو انسان کو اپنے سحر میں مبتلا کر سکتے ہیں ۔ اس غار کے اندر نیلا اور شفاف پانی ہے جو اس کی خوبصورتی کی وجہ ہے ۔

یہ غار صوبہ بوئی زو کے زیون گیتو ہی نیشنل پارک میں واقع ہے۔ گزشتہ ماہ مئی 2018 میں پہلی بار سائنسدان اس کی گہرائیوں میں اترے ہیں اور اندرونی مناظر کی ویڈیو بنائی۔ غار کی ایک طرف بڑا سا سوراخ ہے جہاں سے سورج کی روشنی اندر آتی ہے اور اندر کا نظار انتہائی دلکش ہو جاتا ہے۔ عالمی شہرت یافتہ ادارے نیشنل جیوگرافک سوسائٹی کی مدد سے برطانوی ماہرین نے پہلی بار اس غار کا پتا لگایا تھا لیکن اس کے اندر کے مناظر کی تفصیلات پہلی بار گزشتہ دنوں چینی سائنسدانوں کی ایک ٹیم منظر عام لے کر آئی ہے جو آپ درج ذیل وڈیو میں‌ دیکھ سکتے ہیں:

Leave a comment

اپنا تبصرہ بھیجیں